تمہارا چہرہ کتابی چہرہ ! ( مثل قرآن ہے )

tumhara chehra kitabi chehra - muft malomat

تمہارا چہرہ کتابی چہرہ ! ( مثل قرآن ہے )

کہ دنیا کی تمام رعنائیوں
تمام تر خوبصورتی کو چھوڑ کر
یہ مقدس چیز چومنے کا دل چاہتا ہے
کہ جیسے میرے ہونٹوں کا تعلق ہے اس سے
کہ مرے دل میں محبت موجود ہے اسکے واسطے
اور اس بابرکت ، مقدسی خدائی خدوخال آفتاب کو
تمیز و سنجیدگی سے چھونے کو دل چاہ رہا ہوتا ہے
چاہت ہوتی ہے کہ اسے کسی غلاف میں لپیٹ کر رکھا جائے
اسے چھونے سے پہلے خود کو پاک کرلیا جائے ، وضو کیا جائے

تم قدرت سے بخشا گیا حسین تحفہ ہو !

خدا نے زمیں زادوں کی راہنمائی کو
تمہارے ربّی چہرے سے نوازا ہے
تمہیں خدائی خدوخال بخشے ہیں
تمہیں پیدا کیا کہ تم پاکیزگی بتاؤ
تمہیں دیکھ کر لگے کہ یہ مکمل پاکیزگی ہے
کہ کسی دل میں اک باغلاف قرآن کے لئے رشک نہ آئے
کسی بھی گناہ گار دل میں تمہیں پامال کرنے کی خواہش نہ ہو
جو دیکھے وہ دیکھتا رہ جائے اور تمہیں پڑھنے کی خواہش کرے
تم کو جان کر تم سا ہونے کی خواہش کرے
تمہارے وجود سے ، تمہاری روشنی سے
زمیں پر امن بنا رہے ، لوگ مسلمان رہیں

تم خدائی ساز ہو !

تمہارے احساس سے پتھر صلواۃ کرنے لگیں
تمہارے ورد سے مُردوں میں تازگی بھر آئے
تمہارے کہنے پر بیماریوں کو شفا مل جائے
تمہارے رنگوں کو تتلیاں خواہش کریں
تمہارے لہجے پہ کوئل اداس ہونے لگے
تمہارے چلنے پہ ہرن دل ہار بیٹھے
تمہارے ہونے سے کائنات افضل ہو جائے_!

رائیٹرــ قندیل اسد

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.