سابق سفیر شوکت مقدم کی جواں سالہ بیٹی نور مقدم کے وحشیانہ قتل کا معاملہ پچھلے کچھ دنوں سے ہر اخبار کی سرخی اور ہر چینل کی ہیڈلائین بنا ہوا ہے  اس  قتل نے اسلام آباد کی فضا میں ایک خوف اور سوگواری بھر دی ہے -مفت معلومات

نور مقدم کی پوسٹ مارٹم رپورٹ

نور مقدم کی پوسٹ مارٹم رپورٹ

موت سے پہلے موت کی اذیت

سابق سفیر شوکت مقدم کی جواں سالہ بیٹی نور مقدم کے وحشیانہ قتل کا معاملہ پچھلے کچھ دنوں سے ہر اخبار کی سرخی اور ہر چینل کی ہیڈلائین بنا ہوا ہے  اس  قتل نے اسلام آباد کی فضا میں ایک خوف اور سوگواری بھر دی ہے

نور مقدم کی پوسٹ مارٹم رپورٹ جو پولیس کو موصول ہوئی ہے اس کے مطابق موت دماغ تک آکسیجن کی فراہمی میں بندش سے ہوئی اس کے علاوہ مقتولہ کے جسم کے متعدد حصوں پر تشدد اور تیز دھار آلے کے گہرے زخموں کے نشان موجود ہیں  اس کی داہنی کنپٹی پر اور سینے پر بھی خنجر یا چاقو کے گہرے وار کئے گئے  سر کو تن سے الگ کر کے تین فٹ دور رکھا ۔اس کے علاوہ مقتولہ کے جسم پر رگڑوں کے نشانات بھی ہیں  ۔معدے سے لئے گئے مواد کی فرانزک رپورٹ ابھی موصول نہیں  ہوئی

اس رپورٹ کو دیکھ کے نور مقدم کی موت سے پہلے کی اذیت کا سوچ کے دل کانپ جاتا ہے کہ جانے اس نے زندگی کی جنگ کتنی بار لڑی ہو گی ۔جب اسے گھسیٹا  گیا ہو گا ،جب اس پر چاقو کے گہرے وار کئےگئے  ہوں گے وہ کتنا چیخی ہو گی درد سے تڑپی ہو گی  ملزم کے ہاتھ میں آلہ قتل دیکھ کے مدد کو پکاری ہو گی ۔اور پھر جب گردن پر خنجر چلا ہو گا تو۔۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔

مگر اس کی پکار کسی نے نہ سنی ۔کوئی اس کی مدد  کو کوئی نہ پہنچا ۔اس کی چیخوں  نے کسی کے دل کو نہیں  جھنجھوڈا  ،

اور قاتل جس نے اتنی سفاکی اور بے دردی سے قتل کیا اس میں انسانیت نام کی چیز تھی ہی نہیں ۔اتنی بے رحمی کہ مار کے بھی رحم نہ آیا اور گلہ کاٹ کے تن سے جدا کر کے تین فٹ دور رکھا کہ کہیں  پھر نہ جی اٹھے ۔اتنی نفرت اتنی اذیت کہ اسےانسان کہتے شرم آے ۔ایسی اذیت تو جانور کو بھی مارنے سے پہلے نہیں دی جاتی پھر اس  سدا کی کمزور عورت پر یہ سب کر کے کیا مردانگی دکھائی ظاہر جعفر نے جو معاشرے کا ایک عزت دار فرد کہلاتا تھا اس نے حوا کی بیٹی کی عزت کی دھجیاں اڑا دیں

نور مقدم کے قتل کا فیصلہ جو بھی ہو مگر آنے والی نسلوں کی تربیت پر سوالیہ نشان چھوڑ گئ ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.