عمران خان نے اپنے انٹرویو میں یہ واضح طور پر کہہ دیا ہے کہ نہ میں میں افغان طالبان کے خلاف کوئی آپریشن نہیں کروں گا – مفت معلومات

I Will Not Do Any Operation Upon the Orders of US - Imran Khan - muft malomat

عمران خان نے اپنے انٹرویو میں یہ واضح طور پر کہہ دیا ہے کہ نہ میں میں افغان طالبان کے خلاف کوئی آپریشن نہیں کروں گ

ا اور نہ ہی کسی آپریشن کی اجازت دوں گا۔
امریکہ یہ چاہتا ہے کہ ان کی اسٹرائک میں پاکستان ان کا ساتھ دے اور وہ چاہتا ہے کہ عمران خان پاکستان میں موجود افغانستان

کے نمائندوں کے خلاف آپریشن کریں لیکن عمران خان نے ایک انٹرنیشنل صحافی کے ساتھ گفتگو میں یہ بات واضح کر دی ہے

کہ وہ کسی قسم کا بھی آپریشن نہیں کریں گے اور نہ ہی امریکہ کا اس میں ساتھ دیں گے۔
عمران خان نے کہا کہ تین لاکھ مہاجرین آئے ہیں تو ان میں جو افغانستان کے لوگ ہیں ہم ان کو چن چن کر نکال نہیں سکتے یا ہم

ان کو مار نہیں سکتے کیونکہ ہم نے بہت بار کہا ہے کہ ان کو لے جائیں لیکن ان کے خلاف کوئی آپریشن نہیں کیا جائے گا۔
افغان طالبان اور چائنہ کے تعلقات بہتر ہو چکے ہیں۔ اگر امریکہ افغانستان میں اسٹرائک کرتا ہے تو افغانستان میں بہت سا جانی

نقصان ہوگا وہاں کی بلڈنگز گریں گی انفراسٹرکچر تباہ ہوگا۔ اس سلسلے میں افغان طالبان چائنہ سے مدد مانگ رہے ہیں۔

اگر امریکہ کا افغانستان میں اسٹرائیک کرتا ہے تو افغانستان میں ہونے والا سارا نقصان چائنہ کو ہی بھرنا پڑے گا کیوں

کہ یہ ان کے معاہدے میں شامل تھا۔ اس وجہ سے چائنہ بھی اس اسٹرائک کے خلاف ہے۔ امریکہ نے افغان طالبان

کو یقین دہانی کروائی ہے کہ اگر اسٹرائک ہوتی ہے تو وہ اس صورت میں افغانستان کا پورا پورا ساتھ دے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.